Tags » Saudi Arabia

Moringa tree in arid regions

Photo credit: Google

File:Starr 070207-4276 Moringa oleifera.jpg

 Prospects of Moringa Cultivation in Saudi Arabia

by MRIDHA M.A.U.

ABSTRACT

The Moringa is a fast-growing evergreen or deciduous, multipurpose tree species comprised of 13 species. 289 more words

Desertification

Yemen’s Problem is not Sectarian

This post relates to coverage in the Dawn in relation to our recent event on the crisis in Yemen … “Pakistan has no business in the Arab world” …

912 more words
Discussion

یمن کے تین شہروں میں شدید جھڑپیں،90 افراد ہلاک

تعز میں صدر منصور ہادی کے حامیوں نے حوثیوں کو بعض علاقوں سے پسپا کردیا

http://vid.alarabiya.net/2015/04/26/A-Boul_26415/A-Abopul-26415.mp4

یمن کے تین شہروں میں اتوار کے روز صدر عبد ربہ منصور ہادی کی وفادار فورسز اور حوثی باغیوں کے درمیان خونریز جھڑپیں ہوئی ہیں جن میں کم سے کم نوّے افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق یمن کے جنوبی اور جنوب مغربی شہروں مآرب ،تعز اور عدن میں صدر ہادی کے وفادارسرکاری فوجیوں ،ان کے اتحادی مسلح قبائلیوں پر مشتمل عوامی مزاحمتی کمیٹیوں اور حوثی باغیوں اور ان کے اتحادی علی عبداللہ صالح کے وفادار فوجیوں کے درمیان لڑائی ہورہی ہے۔تعز کے بعض مکینوں نے بتایا ہے کہ منصورہادی کے وفاداروں نے تزویراتی اعتبار سے اہمیت کے حامل اس شہر میں ایران کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا سے بہت سے علاقے واپس لے لیے ہیں۔حوثی جنگجوؤں نے ان علاقوں پر قریباً ایک ماہ قبل قبضہ کر لیا تھا اور انھیں کسی قسم کی مزاحمت کا سامنا نہیں کرنا پڑا تھا لیکن اب انھیں وہاں سے پسپا ہونا پڑا ہے۔اس سے ظاہرہوتا ہے کہ سعودی عرب کی قیادت میں اتحادی ممالک کے فضائی حملوں نے حوثی باغیوں اور ان کی اتحادی ملیشیاؤں کی کمر توڑ دی ہے۔درایں اثناء العربیہ نیوز چینل نے یہ بھی اطلاع دی ہے کہ سعودی عرب کے سرحدی محافظوں نے یمن کی سرحد کے نزدیک واقع جنوب مغربی شہر الجازان کے علاقے آل حراث میں اسلحے سے لدے ایک ٹرک اور ایک گاڑی کو تباہ کردیا ہے۔اس خبر سے قبل ہفتے کی شب سعودی سکیورٹی فورسز نے سرحدی علاقے میں دو گاڑیوں میں سوار پندرہ یمنی حوثی باغیوں کو ہلاک کردیا تھا۔ایک سعودی عہدے دار نے العربیہ کے نمائندے کو بتایا ہے کہ یہ واقعہ بھی جازان کے نزدیک پیش آیا تھا اور سعودی سرحدی محافظوں نے 800 میٹر کے فاصلے سے ٹینک شکن ہتھیار سے گولہ باری کی تھی۔گذشتہ ہفتے اسی علاقے میں سعودی فورسز نے حوثیوں کے ایک گروپ پر توپ خانے سے گولہ باری کی تھی۔ حوثیوں کی ممکنہ دراندازی کو روکنے اور سرحد پر ان کی مسلح کارروائیوں کا توڑ کرنے کے لیے سعودی عرب کے ایک اور جنوب مغربی شہر نجران میں بھی سرحدی محافظوں کو الرٹ کردیا گیا ہے۔

Saudi Arabia

Sunday news round-up: April 20th-26th

Top Story: Deadly earthquake ravages Nepal: An earthquake measuring 7.9 on the Richter scale has struck near Nepal’s capital city, Kathmandu. At least 2,100 people have been killed as a result of the earthquake which struck on Saturday, with thousands more injured and numerous buildings levelled. 608 more words

Sunday News Round-up

Saudi war on Yemen means more terrorism, more refugees

This video from London, England says about itself:

Stop the bloodshed in Yemen is theme of protest in London

25 April 2015

Hundreds of Yemenis marched to the Saudi Embassy to protest against…

1,344 more words
Human Rights

جہاد النکاح (زنا) جیسی لعنت کی افادیت پرسعودی وہابی مفتی نے کتاب لکھ ڈالی

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) تاریخ اسلام ایک ایسے دور سے گذر رہی ہے ،جہاں اسلام کی بنیاد کو نقصان پہنچانے کے لئے ایک طرف بیرونی طور صہیونی برسرپیکار ہیں تو دوسری طرف صہیونی دوست وہابی اندور نی طور پر اسلام کی بنیادیں کھوکھلی کررہے ہیں۔ فاحشی ایک اسی لعنت ہے جس سے اسلام نے سب سے زیادہ دور رہنے کی تلقین کی ہے، کیونکہ فاحشی انسان کو بے حس ، نفس اور شیطان کا پیروکار بنادیتی ہے۔ جبکہ زنا جیسے شریعت محمد ی(ص) نے گناہ عظیم سے تعبیر کیا ہے اسے وہابیوں نے عرا ق و شام میں جاری نام نہاد جہاد کے نام پر عام کرنے کے لئے جہاد النکاح کا نام دیا ہے، اسکا مقصد مجاہدین کو جنسی تسکین محیا کرناہے تاکہ وہ جہاد النکاح کے نام پر زنا جیسے عظیم گناہ کا ارتکا ب کرسکیں۔
عرب ذرائع ابلاغ کے مطابق جہاد النکاح کی افادیت اور جہاد النکاح کے لئے مسلمان لڑکیوں کو دینی بیلک میل کرنے کے لئے سعودی وہابی مفتی نے ایک کتاب “المباح فی الجہاد النکاح” لکھی ہے جو عراق و شام میں تقیسم کی گئی ہے۔پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ شیعہ نیوز کو موصول اطلاعات کے مطابق یہ کتاب عراق میں فوج اور عوامی ملیشیا کے آپریشن کے دوران تکریت میں داعش کے ایک ہیڈکوارئڑ سے ملی ۔ اس کتاب کا مصنف ایک وہابی مفتی الشیخ الایمان ہے۔ اس کتاب میں اس مفتی نے جہاد النکاح کو اسلام میں قانوں میں ڈھالنےکی کوشیش کی ہے ،

اس ضمن میں اس نے من گھڑک احادیث اور قرآنی آیات کا سہار ا لیا گیا ہے، جبکہ جہاد النکاح کرنے والے مر د اور عورتوں کے درجات کو بھی بیان کیا گیا ہے تاکہ اس گناہ کو کرنے کے بعد دہشتگرد دلی سکون بھی حاصل کرسکیںکہ انہوں نے یہ گنا ہ نہیں بلکہ جہاد جیسا عظیم کام انجام دیا ہے۔
اس کتاب میں ایک عورت کو بیک وقت کئی مجاہد یں سے جہاد النکاح (زنا) کرنے کی اجاز ت دی گئی ہے، اس عورت کو جنت میں عالیٰ مقام ملنے کی بھی لالچ دی ہے کیونکہ وہ ایک وقت میں کئی مجاہد یں کی جنسی تسکین کا باعث بن رہی ہیں، لہذا وہ جنت میں عالیٰ مقام پر ہوگئی۔

جبکہ کتاب میں اس سعودی مفتی نے قرآن اور تعلیمات اسلام کے موجود محرم و نامحرم کے قانوں کو بلکل مسترد کرتے ہوئے کہا کہ محاذ جنگ پر حرام حلا ل ہوجاتا ہے، اگر کسی مجاہد کو جنسی تسکین کے لئے کوئی عورت مہیا نا ہو تو اپنی محرمات(ماں، بہن و دیگر) سے جہاد النکاح کرسکتا ہے۔

نوٹ : میڈیا پر شام میں کئی ایسے واقعات رپورٹ ہوچکے ہیں جس میں مجاہدیں نے اپنی محرمات سے جہاد النکاح (زنا) کیا ہے۔یہ سب ان سعودی وہابی مفتیوں کی تعلیمات کا نتیجہ ہے۔اس کتاب میں ایک عورت کا کئی مردوں سے جنسی تعلقات قائم کرنے کی وجہ سے پھیلنے والی بیما ریاں بالخصوص ایڈز جیسے مرض سےمرنے والوں کو بھی شہید قرار دیا ہے۔ اور کہا ہے کہ مجاہدین غم نا کھائیں وہ میدان میں مریں یا ایڈز سے شہید ہے۔تاہم اس کتاب کو عالم اسلام کے حقیقی پیروکاروں نے مسترد کردیا ہے ۔

Saudi Arabia